Wednesday, June 19, 2019
News Code : 354428 | Publish Date :2019/1/1 - 13:50 | Category: Urdu News
ایران کے مذہبی اسکالر:
دعا انسان کو خالق سے ملانے کا ذریعہ ہے
حوزہ/ دینی علوم کے استاد نے خواتین کے درمیان گفتگو کرتے ہوئے کہا: دعا کرنا درحقیقت تمام کائنات کے برابر ہونا ہے کیونکہ قرآنی آیات کی روشنی میں پوری کائنات تسبیح اور قنوت کی حالت میں ہے اور تمام موجودات خدا کی بارگاہ میں اپنے محتاج ہونے کا اقرار کرتی ہیں۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق شہر گنبد کاوس کی علاقہ پیر حاجی کی ایک مسجد میں دعا کے موضوع پر ایک نشست منعقد ہوئی۔ اس نشست میں دینی علوم کی استاد محترمہ مریم خادمی نے خواتین کے درمیان گفتگو کرتے ہوئے کہا: دعا کرنے والے اور خدا سے غافل انسان کے درمیان فرق ہے اور خدا کا لطف و کرم ہمیشہ دعا کرنے والے کے شامل حال رہتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا:  دعا خداوندعالم سے راز و نیاز کا ذریعہ ہے اور اس سے خدا کا لطف و کرم دعا کرنے والے انسان کے شامل حال ہوتا ہے۔

مریم خادمی نے کہا: توسل اور اولیائے خدا کی زیارت سے انسان کے حالات بدل جاتے ہیں اور قرآنی آیات اور روایات میں دعا کے متعلق بہت اچھی تعبیریں استعمال ہوئی ہیں جس سے معلوم ہوتا ہے کہ انسان کی زندگی میں دعا کے آثار بہت زیادہ ہیں۔

انہوں نے سورہ بقرہ کی آیت نمبر 186 کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا:  انسان کی دعا قبول نہ ہونے میں بھی خدا کی مصلحت اور اس کا لطف وکرم پوشیدہ ہوتا ہے کیونکہ بعض اوقات انسان کی دعا قبول ہونا خود اس کی خدا سے غفلت اور اس کے دین کی نابودی کا باعث بن جاتا ہے اور کبھی انسان کی حاجت کا قبول نہ ہونا انسان سے مصیبت کے ٹل جانے کا باعث بنتا ہے۔

انہوں نے آخر میں کہا: دعا کرنا درحقیقت پوری کائنات کے ہمرنگ اور ہمراہ ہونا ہے ۔ آیات کی روشنی میں پوری کائنات تسبیح اور قنوت میں ہے اور تمام موجودات خدا کے سامنے اپنی عجز و ناتوانی کا اظہار کرتے ہیں۔

 

Send Comment
Name :
Email:
Comment:
Send
View Comments