Thursday, December 13, 2018
News Code : 353600 | Publish Date :2018/10/11 - 10:19 | Category: Urdu News
حوزہ علمیہ قم کے استاد:
اگر عمل خدا کے لئے ہو تو انسان کو لوگوں کی باتوں سے پریشان نہیں ہونا چاہئے
حوزہ /ایران کے شہر فریدن میں مدرسہ علمیہ الزهراء(سلام اللہ علیھا) میں "انسان کے عمل میں اخلاص کے کردار" کے موضوع پر ایک اخلاقی نشست منعقد ہوئی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق حوزہ علمیہ قم کے استاد حجت الاسلام و المسلمین امراله میسائی نے شہر فریدن میں مدرسہ علمیہ الزهراء(سلام اللہ علیھا) میں "انسان کے عمل میں اخلاص کا کردار"  کے موضوع پر ایک اخلاقی نشست میں گفتگو کرتے ہوئے قرآن کریم کی سورۂ زمر آیات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: اعمال کی قدر و قیمت ان کی کثرت سےنہیں بلکہ ان کی کیفیت سے ہے۔ اگر اعمال میں خلوصِ نیت نہیں تو وہ اس دھول کی مانند ہیں جو پتھر پر ہوتی ہے اور ہوا کے تیز جھونکے اسے اپنے ساتھ اڑا کر لے جاتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا: اگر انسان خدا کے لئے عمل انجام دے تو اسے لوگوں کی باتوں سے پریشان نہیں ہونا چاہئے۔

دینی علوم کے اس استاد نے کہا: لفظ مخلَص اور مخلِص میں فرق ہے۔ مخلَص وہ افراد ہیں کہ جنہیں خداوند عالم نے خالص اور پاک وپاکیزہ دیا ہے اور شیطان ان کے نزدیک نہیں جاتا ہے لیکن مخلِص وہ افراد ہیں جو خالص ہونے کی کوشش کر رہے ہیں۔

حجت الاسلام و المسلمین امراله میسائی نے آخر میں کہا: اعمال کا تعلق نیت سے ہے کبھی ایک نماز یا ایک تقریر سے انسان بہشتی یا جہنمی ہو جاتا ہے۔

Send Comment
Name :
Email:
Comment:
Send
View Comments